نور مقدم

نور مقدم قتل کیس: قتل میں تیز دار آلے کا استعمال کیا گیا

نور مقدم
نور مقدم کے قتل کے الزام میں گرفتار فرد کو آج عدالت میں پیش کیا گیا۔

اسلام آباد: تھانہ کوہسار کے پوش علاقہ ایف سیون فور کی گلی نمبر 60 میں واقع بنگلے میں انتہائی سفاکی کے ساتھ قتل ہونے والی سابق سفارتکار شوکت مقدم کی 28 سالہ صاحبزادی نور مقدم کی پوسٹ مارٹم رپورٹ پولیس کو موصول ہوگئی۔

پوسٹمارٹم رپورٹ میں خاتون کو چاقو کے متعدد وار کرکے قتل کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مقتولہ کا سر دھڑ سے الگ کیا گیا اور مقتولہ کے جسم پر تشدد کے متعدد نشانات پائے گئے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مقتولہ کے گھٹنے کے نیچے کے حصے پر زخموں کے متعدد نشانات ہیں جبکہ مقتولہ کے جسم پر مختلف مقامات پر چاقو کے گہرے زخم ہیں۔

مقتولہ کے معدے سے لیا گیا مواد فرانزک کیلئے لاہور لیبارٹری بھجوا دیا گیا ہے جس کی رپورٹ پولیس کو تاحال موصول نہیں ہوئی۔

واضح رہے کہ عید الاضحیٰ سے ایک روز قبل 20 جولائی 2021ء کو تھانہ کوہسار کی حدود ایف سیون فور میں 28 سالہ لڑکی نور مقدم کو تیز دھار آلے سے قتل کیا گیا تھا۔

تھانہ کوہسار

پولیس نے مقتولہ کے والد شوکت مقدم جو کہ مختلف ممالک میں پاکستان کے سفیر رہ چکے ہیں کی مدعیت میں ظاہر ذاکر نامی ملزم کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی ہے جو مقامی بزنس مین کا بیٹا ہے۔

جو اس وقت پولیس حراست میں ہے۔آئی جی اسلام آباد کی ہدایت پر مقدمہ میں ملوث ملزم کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کے لئے متعلقہ ادارے کو بھی آگاہ کر دیا گیا ہے۔

پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ ملزم کا بیرون ممالک انگلینڈ اور امریکہ سے بھی کرمینل ریکارڈ حاصل کرنے کے لئے متعلقہ اداروں سے رابطے شروع کر دیئے گئے ہیں۔‏

تاہم ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ مقتولہ کے قاتل کو اب امریکہ بھگانے کی تیاریاں ہو رہی ہیں اور کیس یہ تیار کیا جا رہا ہے کہ قاتل ذہنی مریض تھا۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ

سمیع اللہ خان ایک نوجوان بلاگر ہیں جو سماجی مسائل، حالات حاضرہ کے علاوہ اصلاحی طنز و مزاح بھی لکھتے ہیں۔ اس کے علاوہ آپ ’خوشحال‘ کے چیف ایڈیٹر بھی ہیں۔

شیئر کریں
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!