ضلع کرک: گاوں کا واحد کنواں جو پورے علاقے کی ضرورت پوری نہیں کرتا

کرک: (مروان خٹک) تیل و گیس کے ذخائر سے مالا مال ضلع کرک کا دور افتادہ علاقہ دوڑہ الگڈہ اب بھی بنیادی ضروریاتِ زندگی سے محروم ہے۔

یونین کونسل پلوسہ سر کا دور افتادہ پہاڑی علاقہ دوڑہ الگڈہ اس ترقی یافتہ دور میں بھی بنیادی ضروریاتِ زندگی گیس,پانی,بجلی اور روڈ سے محروم ہے۔

امیر ترین ضلع کے سیاسی نمائندے صرف الیکشن کے وقت ہی اپنا ووٹ بینک بنانے کے لئے عوام علاقہ سے انکے مسائل کے حل کے لیے جھوٹے وعدوں تک ہی محدود ہوتے ہیں۔

ضلع کرک پانی مسلہ
خیبرپختونخواہ کے ضلع کرک کے یونین کونسل پلوسہ میں ٹیوب ویل نہ ہونے کی وجہ سے مقامی آبادی کنویں سے پانی لے کر جاتے ہیں۔ تصویر: سمیع خان

بجلی گیس روڈ تو دور کی بات بنیادی ضرورت پانی کا مسلہ بھی پچھلے کئ دہائیوں سے شدت اختیار کرچکا ہے۔

پہاڑی علاقہ ہونے کی وجہ سے عورتیں اور بچے میلوں سفر کرکے علاقے میں موجود واحد کنویں سے اب بھی ہاتھوں کے ذریعے کئ سو فٹ گہرائی سے پانی حاصل کرتے ہیں۔

پچاس گھرانوں پر مشتمل یہ علاقہ انتہائی کٹھن اور اونچے اونچے پہاڑوں کی وجہ سے شدید مشکلات کا شکار ہے۔

لوگ سڑکیں نہ ہونے کی وجہ سے جھونپڑیوں اور غاروں کو کود کر تعمیر کردہ کمروں میں رہائش پزیر ہے۔

عوام علاقہ کے مسائل کو ایمرجنسی بنیادوں پر حل کرنے کی اشد ضرورت ہے۔

ضلع کرک
ضلع کرک کے یونین کونسل پلوسہ سر میں مقامی آبادی کنویں سے پانی لے جانے کیلئے کئی کلو میٹر دور سے آتے ہیں اور گاوں دوڑہ الگڈہ کے واحد کنویں سے گدھوں کے ذریعے سے پانی۔گھر لیکر جاتے ہیں۔ تصویر: سمیع خان

علاقے میں ڈسپنسری نہ ہونے کی وجہ سے مریضوں کو کئ کلومیٹر سفر کے بعد صابر آباد ہسپتال پہنچایا جاتا ہے۔

حکومت وقت اور ضلعی ادروں سے اپیل ہے کہ وہ ہنگامی بنیادوں پر دور افتادہ علاقے دوڑہ الگڈہ کے مسائل کو حل کریں تاکہ عوام علاقہ مزید مشکلات کا شکار نہ بن سکے۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ

شیئر کریں
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!