ضلع کرک: مقتول صحافی وسیم عالم کے قتل میں والد ملوث نکلا

کرک: تفصیلات کیمطابق 10اپریل کی شام کو کرک کے علاقہ میٹھا خیل بازار میں مقامی صحافی وسیم عالم نا معلوم افراد کے فائرنگ سے جابحق ہونے والے صحافی وسیم عالم کے قاتل سگے باپ کو دو دن کے اندر گرفتار کر لیا گیا۔

مقتول صحافی وسیم عالم کے قاتل کی گرفتاری کے حوالے سے میڈیا کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ صحافی کے قتل پر انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخواہ ثناءاللہ عباسی اور ریجنل پولیس چیف کوہاٹ طیب حفیظ چیمہ نے سخت ردعمل کا اظہار کیا تھااور صحافی کے قاتلوں کو جلد گرفتار کرنے کے احکامات بھی جاری کئے تھے ۔

مزید بتاتے ہوئے کہا کہ مقتول مقامی صحافی وسیم عالم کے والد حق نواز خان جو محکمہ واپڈا سے ریٹائرڈ ہو اہے ، اور مقتول وسیم عالم اپنے والد حق نواز سے ان کے پنشن کے پیسوں کا مطالبہ کر رہا تھا۔ جبکہ مقتول کے والد حق نواز پنشن کی رقم کو اپنے بھائیوں کو حوالہ کرنا چاہتا تھا۔ جس پر مقتول وسیم عالم اور ان کے والد حق نواز کے مابین تلخ کلامی ہوئی جس پر مقتول کے والد حق نواز تیش میں آکر اپنے لائسنس دار پستول سے اس پر فائرنگ کی۔ جس کے نتیجے میں وسیم عالم لگ کر موقع پر جابحق ہوا اور قاتل پولیس کی گرفتاری سے بچنے کیلئے روپوش ہوا۔

وقوعہ کے اطلاع پر پولیس نے تھانہ کرک سٹی میں مقتول وسیم عالم کے والدہ کی مدعیت میں نامعلوم ملزمان کیخلاف فوری مقدمہ درج کر لیا۔ میں نے بذات خود اس کیس کو چیلج کے طور پر قبول کرکے ایس ایچ او سٹی آصف شریف اور DSB سٹاف کو ملزمان کی گرفتاری کا ٹاسک سونپتے ہوئے اس کیس کی میں براہ راست نگرانی بھی کر رہا تھا۔ ایس ایچ او اور تفتیشی ٹیم نے اپنے پیشہ وارانہ مہارت سے جدید سائنسی خطوط پر ملزم کو ٹریس کرکے ملزم تک رسائی حاصل کی۔

ملزم حق نواز جو وقوعہ کے بعد ضلع لکی مروت فرار ہوا اور پھر اگلے دن ضلع کرک کے علاقہ محبتی زیارت علاقہ تھانہ کرسٹی آیا جس کو نہایت حکمت عملی کے تحت اپنے ہی سگے بیٹے کے قاتل حق نواز کو گرفتار کر لیاگیا۔

بعد از گرفتاری ملزم نے اپنے بیٹے کو قتل کرنے کا اعتراف جرم بھی کر لیا۔ تاہم ملز م ابھی تک تفتیشی ٹیم کی تحویل میں ہے جس سے مزید انٹاروگیشن جاری ہے۔ملزم اپنے غلطی پر نالاں ہے اور اس اقدام کو اپنی بڑی غلطی قرار دے رہا ہے۔

واضح رہے کہ مقتول صحافی کے قاتل کی گرفتاری پر کرک پریس کلب ممبران جانب سے ڈی پی او کرک طارق حبیب خان کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ان کی کوششوں کو سراہا اور پولیس پارٹی کو نقد انعامات بھی دئیے۔

شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ

شیئر کریں
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!