”یونیورسٹیز کیلئے کاروباری اداروں کے ساتھ مفاہمتی یاداشت پر دستخط کرنا ناگزیر ہوچکا ہے“

کرک: وائس چانسلر خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک پروفیسر ڈاکٹر جوہر علی نے جامعات اور کاروباری اداروں کے درمیان مفاہمتی یاداشت پر دستخط اور باہمی اشتراک کے منصوبوں کو تدریس کے فروغ کیلئے ناگزیر قرار دیا ہے۔
انہوں نے یہ بات بدھ کے روز یونیورسٹی میں ایکسٹریم کامرس خیبرپختونخوا کے ساتھ مفاہمتی یاداشت پر دستخط کرنے کی ایک تقریب سےخطاب کرتے ہوئے کہی۔
مفاہمتی یاداشت پر وائس چانسلر خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک پروفیسر ڈاکٹر جوہر علی اور ہیڈ آوٹ ریچ ایکسٹریم کامرس خیبرپختونخوا محمد معظم جمیل نے دستخط کئے۔

خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک کا کالجوں کے الحاق کمیٹی کا پانچواں اجلاس

اس مفاہمتی یاداشت کے تحت ایکسٹریم کامرس یونیورسٹی کے طلباء فیکلٹی اور اور سٹاف کو دور جدید کے کاروباری طریقوں سے ہم آہنگ کرنے کے لیے تربیت فراہم کریگا اور ان کی صلاحیتوں کو بہتر بنایا جائے گا۔
مفاہمتی یاداشت کی یہ تقریب کرک یونیورسٹی کے آفس آف ریسرچ انوویشن اینڈ کمرشلایزیشن ORIC (اوریک) نے منعقد کی تھی۔ وائس چانسلر نے ڈائریکٹر اوریک ڈاکٹر انور خان کی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے امید ظاہر کی ان یاداشتوں کو جلدازجلد عملی جامہ پہنایا جایئگا۔
ایکسٹریم کامرس کے ہیڈ آوٹ ریچ خیبرپختونخوا محمد معظم جمیل نے اس موقع پر اس عزم کا اعادہ کیا کہ انکا ادارہ خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک کے باہمی اشتراک سے جنوبی ریجن اور پاکستان میں معاشی سرگرمیوں کے فروغ کیلئے کوشیشیں تیز کرے گا انہوں نے ایکسٹریم کامرس کی ٹیم کا پرتپاک خیر مقدم کرنے پر کرک یونیورسٹی کا شکریہ ادا کیا۔
مفاہمتی یاداشت پر دستخط کرنے کی تقریب کے موقع پر خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک کے رجسٹرار محمد رشاد خٹک، ڈائریکٹر اوریک ڈاکٹر انور خان ، ڈپٹی رجسٹرار میٹینگ عبدالسلام اور کمیونیکیشن اینڈ میڈیا سٹڈیز ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ ڈاکٹر محمد انور بھی موجود تھے۔

50% LikesVS
50% Dislikes
شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!