لیبیا کے ایک بینک کا فرانس کے صدر مکرون کیخلاف احتجاج کا ایک منفرد انداز

فرانس میں حالیہ سرکاری طور پر شائع ہونے والے حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کے گستاخانہ خاکوں کے خلاف جہاں دنیا بھر کے مسلم ممالک میں مظاہرے اور فرانسیسی مواد کا بائیکاٹ ہو رہا ہے وہی لیبیا کے ایک نیکی بینک نے ایک نیا اور انوکھا احتجاج ریکارڈ کیا۔

لیبیا کے ایک پرائیویٹ بینک نے اپنا احتجاج کچھ مختلف انداز میں ریکارڈ کر وایا ۔ کرونا وائرس کی وجہ سے جہاں دنیا بھر میں سماجی دوری کیلئے مختلف پوائنٹس بنائے جارہے ہیں، اسی طرح لیبیا کے اس پرائیویٹ بینک میں سماجی دوری کو ممکن بنانے میں اہم کردار ادا کرنے والے پوائنٹس جو صارفین کے لیے بنائے گئے ہیں پر فرانسیسی صدر میکرون کا عکس ہے اور اس عکس پر ایک جوتی کی چھاپ ہے جس پر بینک میں صارفین آ کر کھڑے ہو جاتے ہیں۔

لیبیا میں اس نجی بینک کا احتجاج کا انداز دنیا کے باقی مسلم ممالک میں ہونے والے مظاہروں سے بالکل مختلف ہے۔ عام طور پر جہاں عوام کا آمدورفت اور آنا جانا زیادہ رہتا ہے وہاں پر کرونا سے بچاؤ کیلئے اور سماجی دوری کو ممکن بنا کے لئے چھوٹے چھوٹے پوائنٹس بنائے جاتے ہیں، مگر لیبیا کی اس بینگ کا یہ احتجاج بالکل الگ اور ایک نیا اور مختلف انداز ہے۔

شیئر کریں

تبصرے بند ہیں

براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ

سمیع اللہ خان ایک نوجوان بلاگر ہیں جو سماجی مسائل، حالات حاضرہ کے علاوہ اصلاحی طنز و مزاح بھی لکھتے ہیں۔ اس کے علاوہ آپ ’خوشحال‘ کے چیف ایڈیٹر بھی ہیں۔

شیئر کریں
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!