انڈونیشیا: کرونا مریض کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنے پر نرس معطل

انڈونیشیا میں مرد نرس کو کرونا وائرس کی مریض کے ساتھ جنسی تعلقات بنانے کے کے الزام میں اپنے ذمہ داریوں سے معطل کر دیا گیا۔ معطل کرنے کی سب سے بڑی وجہ دوران جنسی تعلق کے دوران پی پی ای یعنی پرسنل پروٹیکٹیو ایکویپمنٹس کو ہٹانا تھا۔

برطانوی ویب سائیٹ انڈیپنڈنٹ کے مطابق ایک معاملہ اس وقت زیر بحث آیا جب ایک ٹویٹر اکاونٹ پر ایک تصویر اپلوڈ ہوئی، اس تصویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ انڈونیشیا کے شہر جکارتہ کے ایک ہسپتال میں کرونا وارڈ میں لیکن روز کے پرسنل پروٹیکٹیو ایکویپمینٹس زمین پر پڑے ہوئے ہیں۔

ٹوئٹر صارف نے اس مکالمے کے سکرین شاٹس بھی پوسٹ کئے کہ جس میں اس ٹویٹر صارف نے اس مرد نرس کےساتھ اس حوالے سے میسج میں گفتگو کی تھی۔

ٹوئٹر صارف کی ٹویٹ وائرل ہونے پر مختلف ٹوئتر صارفین نے متعلقہ حکام سے اس واقعہ کا نوٹس لینے اور تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

معاملہ سوشل میڈیا پر انتہائی وائرل ہونے کے بعد ہسپتال انتظامیہ نے مرد نرس کو معطل کر دیا اور واقعہ کی تحقیقات شروع کر دی۔

شیئر کریں
براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ

شیئر کریں
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!