وائس چانسلر ڈاکٹر جوہر علی کی صدارت خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک کے ساتویں ایڈوانس سٹڈیزاینڈ ریسرچ بورڈ کا اجلاس

خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک کے ساتویں ایڈوانس سٹڈیز اینڈ ریسرچ بورڈ کا اجلاس زیر صدارت وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جوہر علی بدھ کےروز یونیورسٹی آڈیٹوریم میں منعقد ہوا جس میں شعبہ مینجمنٹ سائنسز’ لائبریری اینڈ انفارمیشن سائنس، کمپیوٹر سائنس اور بائیو انفارمیٹکس کے 11 ایم ایس، ایم فل سکالرز کے ریسرچ پروپوزل کی منظوری کے بارے میں غور کیا گیا۔
اجلاس میں ایڈوانس سٹڈیز اینڈ ریسرچ بورڈ کے دیگر ممبران پشاور یونیورسٹی کے انوائرمنٹل سائنس کے پروفیسر ڈاکٹر حزب اللہ خان، ڈین فیکلٹی آف سوشل سائنسز کوہاٹ یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد نصیرالدین الدین، خیبرپختونخوا آئل اینڈ گیس کمپنی لمیٹڈ کے سینئر جیالوجسٹ نعیم اللہ، ڈیپارٹمنٹ آف باٹنی اسلامیہ کالج یونیورسٹی پشاور کے ڈاکٹر محمد سلیم، ڈائریکٹر اوریک کرک یونیورسٹی ڈاکٹر انور خان، ڈائریکٹر کیو ای سی کرک یونیورسٹی محمد شاہ دین، شعبہ لائبریری اینڈ انفارمیشن سائنس کے سربراہ ڈاکٹر سعیداللہ جا ن اور زوالوجی ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ ڈاکٹر عبالعزیز سمیت ڈائریکٹر جنرل آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی پشاور کے ایڈیشنل ڈائریکٹر عابد سہیل اور کرک یونیورسٹی کے ڈائریکٹر اکیڈمک اینڈ ریسرچ محمد رحیم نے شرکت کی۔
اجلاس میں ایم فل، ایم ایس سکالرز کےلئے سپروائزر کی تقرری کے بارے میں بھی فیصلے کئے گئے اور بعض کیسز میں سٹڈی کے دورانیے میں توسیع کےلئے سفارشات منظوری کی گئیں۔
اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک پروفیسر جوہر علی نے کہا کہ ایم ایس، ایم فل اور پی ایچ ڈی سٹڈیز کےلئے منظور شدہ قوانین میں بہتری لائی گئی ہے جنکی بدولت اب یونیورسٹی کے اداروں کو فیصلہ کرنے میں اسانی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اعلی تعلیم کے سکالرز کی باریک بینی سے جانچ پڑتال ضروری ہے۔ تاکہ صرف اہل سکالرز کو ڈگریز ملے۔
وائس چانسلر نے اجلاس کے تمام ممبران کی کوششوں کی تعریف کی جن کی شرکت سے ساتواں اجلاس منعقد کرنا ممکن ہوا۔
جاری کردہ
ڈاکٹر محمد انور
میڈیا انچارج

100% LikesVS
0% Dislikes
شیئر کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

براہ کرم ایڈ بلاکر کو غیر فعال کریں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں.

 یا اس ویب سائٹ کو اپنے ایڈ بلاکر سے وائٹ لسٹ کریں. شکریہ
error: ڈیٹا کاپی رائٹ محفوظ ہے!